کرونا میرا کیا بگاڑ لے گا؟ 116 سالا شخص نے وائرس کو سگریٹ کا دھواں بنا دیا

کراچی (ویب ڈیسک) کرونا وائرس نے جہاں دنیا کو اپنی گرفت میں لے کر لاکھوں لوگوں کو متاثر کیا ہے اور اب تک ہزاروں افراد لقمہِ اجل بن چکے ہیں وہاں جنوبی افریقہ میں ایک ایسا شخص بین الاقوامی میڈیا کی زینت بنا ہوا ہے جس نے سگریٹ کا دھواں ہوا میں اڑاتے ہوئے کہا ہے کہ “کرونا وائرس میرا کیا بگاڑ لے گا؟”
عالمی خبررساں ادارے اے ایف پی نے اپنی رپورٹ میں لکھا ہے کہ 116 سالا فریڈی بلوم ممکنہ طور پر دنیا کا سب سے بڑی عمر والا شخص بتایا جا رہا ہے کیونکہ گنیز بک آف ورلڈ رکارڈ کے مطابق دنیا کے سب سے عمر رسیدہ شخص برطانوی شہری کی عمر 112 سال ہے جبکہ کرونا وائرس کو سگریٹ کے دھوئیں میں اڑانے والا یہ افریقی 116 سالا شخص اپنے اس منفرد انداز کے بعد اب میڈیا کی زینت بن رہا ہے۔
فریڈی بلوم کی پیدائش 1904 میں جنوبی افریقہ کے دیہی علاقے ایڈلیڈ میں ہوئی تھی جس کا کہنا ہے کہ خدا کا شکر ہے کہ مجھے اتنی طویل زندگی جینے کو ملی ہے۔ سگریٹ جلاتے ہوئے اس نے 1918 میں دنیا کو جکڑنے والی وبا کا تذکرہ کیا جس کے دوران دنیا میں لاکھوں ہلاکتیں ہوئی تھیں۔ فریڈی کا کہنا ہے کہ میں نے بہت ساری جنگیں دیکھی ہیں، اسپینش فلو وبا کے دوران میری بہن کا انتقال ہوتے دیکھا ہے، یہ کرونا وائرس میرا کیا بگاڑ لے گا؟

افریقی کسان فریڈی نے جنوبی افریقہ کے صدر سرل ریمفوسا سے شکوہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ کرونا وائرس کے پھیلاؤ کو روکنے کے لئے حکومت کی جانب سے لاک ڈاؤن نافذ کیا گیا جس کا سب سے بڑا نقصان یہ ہوا کہ سگریٹ نہیں مل رہا تھا۔ اس نے مزید کہا ہے کہ صبح تین یا چار بجے اٹھ کر سائیکل پر کھیتوں کی طرف جاتا ہے تاہم گذشتہ دو برس سے ڈاکٹر کے پاس جانا چھوڑ دیا ہے ۔ فریڈی بلوم کی 86سالا بیوی جینیٹ نے بتایا کہ کبھی کبھی ڈسپرین کی گولی کھا لیتا ہے ورنہ کچھ میری ادویات چرا لیتا ہے۔ عام طور پر فریڈی کو دوائی کی ضرورت بھی پیش نہیں آتی۔

تمباکو نوشی صحت کے لئے مضر ہے 

اپنا تبصرہ بھیجیں