بیس ہزار سمندر پار پاکستانیوں کو واپس لایا گیا ہے، معید یوسف

کراچی (ویب ڈیسک) وزیرِاعظم کے معاونِ خصوصی برائے قومی سلامتی معید یوسف نے کہا ہے کہ مختلف ممالک سے اب تک بیس ہزار پاکستانیوں کو خصوصی پروازوں کے ذریعے واپس لایا گیا ہے تاہم اب بھی ایک لاکھ بیس ہزار سے زائد پاکستانی وطن واپس آنا چاہتے ہیں۔ بیرونی ممالک سے ملک پہنچنے والے سمندر پار پاکستانیوں سے متعلق ان کا کہنا تھا کہ واپس آنے والوں میں کرونا وائرس کی تشخیص مثبت آنے کی صورت میں صوبائی حکومت کو فیصلہ کرنا ہوگا کہ ان کو گھر میں ہی قرنطینہ کیا جائے یا سرکاری قرنطینہ میں رکھا جائے۔
انہوں نے مزید کہا کہ وزیرِاعظم عمران خان چاہتے ہیں کہ اس مشکل وقت میں زیادہ سے زیادہ پاکستانی اپنے وطن پہنچ سکیں جس کے لئے اقدامات کئے جا رہے ہیں۔ دس ہزار مزید پاکستانیوں کو واپس لانے کی تیاریاں کی جارہی ہیں۔ مختلف ممالک سے وطن لائے جانے والے مسافرین کی کرونا وائرس تشخیص سے متعلق انہوں نے کہا کہ جن ممالک سے پاکستانیوں کو واپس لایا جا رہا ہے ان سے بات کررہے ہیں تاکہ روانگی سے قبل بھی تشخیص یقینی بنائی جائے اور یہاں پہنچنے پر دوبارہ تشخیص کی جائے گی۔
اس موقع پر انہوں نے وطن واپس آنے والے تمام پاکستانیوں سے تعاون کی اپیل کرتے ہوئے کہا کہ وہ حکومت کا ساتھ دیں ورنہ کرونا وائرس ان کے اہلخانہ تک پہنچ سکتا ہے اور اگر ایسا ہوا تو بیرونی ممالک سے پاکستانیوں کو واپس لانا مشکل ہو جائے گا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں