کرونا وائرس، ضلع ملیر کی مجموعی صورتحال کیا ہے؟

ملیر (نامہ نگار، منظور سولنگی) میمن گوٹھ میں سرکاری ہسپتال کے دو میاں بیوی ڈاکٹرز میں کرونا وائرس مثبت آگیا ہے۔ دونوں متاثرین کو فوری طور پر گھر میں قرنطینہ کردیا گیا ہے۔ ہسپتال میں ا و پی ڈی بند کردی گئی ہے اور ہسپتال میں اسپرے کا عمل شروع کردیا گیا ہے۔ ایم ایس کا کہنا ہے کہ تمام پیرا میڈیکل اسٹاف و ڈاکٹرز کے نمونے لیے جائیں گے۔
دوسری جانب ضلع ملیر میں تیزی سے پھیلتے کرونا وائرس کے باعث گلشنِ حدید میں پیر کے روز دوسری مرتبہ کرونا وائرس کی تشخیص کے لئے کیمپ قائم کیا گیا جس میں عوام نے خوف و ہراس کے باعث عدم دلچسپی کا مظاہرہ کرتے ہوئے حصہ نہیں لیا اور صرف 61 لوگوں کے نمونے لیے جا سکے۔ چند روز قبل ایک ہی گھر کے 10افراد جن کا کرونا ٹیسٹ مثبت تھا اور ان کے گھر کا اہم فرد ہسپتال میں وفات پا گیا تھا ان کے بھی نمونے دوبارہ لئے گئے۔ انڈس ہسپتال کی جانب سےلیے گئے نمونوں کے نتائج کل تک جاری کردیے جائیں گے۔
محکمہِ صحت ملیر کے اعداد و شمار کے مطابق یکم اپریل تا 10 مئی ملیر میں کرونا وائرس کے 819 کیس ظاہر ہوئے جن میں سے گیارہ افراد ہلاک ہوچکے ہیں جبکہ 78صحتیاب اور 730 مریض ہسپتالوں اور گھروں میں زیرِ علاج ہیں۔ ان علاقوں میں یونین کونسل ابراہیم حیدری، ریڑھی، بھینس کالونی، قائد آباد، لانڈھی، گلشنِ حدید، میمن گوٹھ، درسنہ چھنہ، مظفر آباد، مسلم آباد، داؤد چورنگی، معین آباد، شرافی گوٹھ، جعفر طیار، غریب آباد، غازی بروہی، ملیر کینٹ اور قرنطینہ مرکز شامل ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں