بھارت، میکسیکو، ناروے اور آئرلینڈ، اقوام ِمتحدہ کی سلامتی کونسل کے رکن منتخب

اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل میں 2021 اور 2022 کے لیے 4 نئے ممالک، بھارت، میکسیکو، ناروے اور آئرلینڈ، کو اراکین منتخب کرلیا گیا اور کینیڈا کو ایک مرتبہ پھر ناکامی کا سامنا کرنا پڑا جبکہ افریقہ کی نشست کا فیصلہ دوسرے مرحلے میں ہوگا۔

فرانسیسی خبررساں ادارے اے ایف پی کی رپورٹ کے مطابق بھارت، میکسیکو، ناروے اور آئرلینڈ، سلامتی کونسل کے غیر مستقل رکن منتخب ہوئے ہیں جبکہ جمہوریہ جبوتی اور کینیا دو تہائی اکثریت حاصل کرنے میں ناکام ہوگئے۔

طویل اور بہترین مہم کے باوجود مغربی نشستوں میں سے ایک پر آئرلینڈ اور ناروے نے ایک مرتبہ پھر کینیڈا کو شکست دے دی جس کے نتیجے میں وزیراعظم جسٹن ٹروڈو کو دھچکا لگا۔

الیکشن میں ایشیا پیسیفک سے بھارت نے حصہ لیا تھا 192 ممالک میں سے 184 ووٹ دیے گئے۔

میکسیکو نے بھی بلامقابلہ حصہ لیا اور 187 ووٹ حاصل کیے۔

دوسری جانب افریقی ممالک جو ہمیشہ اپنا امیدوار منتخب کرنے میں کامیاب رہے ہیں اس مرتبہ ایک بھی ملک آگے نہیں جاسکا، کینیا نے 178 ووٹ اور جمہوریہ جبوتی نے 78 ووٹ حاصل کیے۔

فرانسیسی زبان بولنے والا ملک جمہوریہ جبوتی اور انگریزی زبان کا حامل کینیا دونوں ہی افریقہ میں ہیں اور اس کے ساتھ ساتھ اقوام متحدہ امن مشنز میں کردار کے ذریعے امن کے حصول میں اپنے کردار کی نشاندہی کررہے ہیں۔

کینیا نے صومالیہ اور جنوبی سوڈان سے مہاجرین کا خیرمقدم کرنے اور ان دونوں ممالک کی کمزور حکومتوں سے تعاون کی نشاندہی کی ہے۔

جس کے بدلے میں جمہوریہ جبوتی نے صومالیہ میں اپنے کردار کے ساتھ ساتھ اسٹریٹجک لوکیشن اور مختلف ممالک جیسا کہ فرانس، امریکا، چین اور جاپان کے دفاعی اڈے کے طور پر غیر معمولی کردار سے متعلق باور کرایا۔

علاوہ ازیں یورپی اور مغربی نشستوں کے لیے مقابلہ معمول سے زیادہ تھا۔

اس سے قبل کینیڈا کو 2010 میں سلامتی کونسل میں شکست کا سامنا ہوا تھا جب جنرل اسمبلی نے پرتگال کو منتخب کیا تھا۔

حالیہ انتخاب میں ناروے نے 130 اور آئرلینڈ نے 128 ووٹ حاصل کیے، واضح رہے کہ سلامتی کونسل میں نشست جیتنے کے لیے کم از کم 128 ووٹ درکار ہوتے ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں