اپوزیشن کی مخالفت کے باوجود بجٹ 21-2020 قومی اسمبلی میں کثرت رائے سے منظور

کراچی، ویب ڈیسک

قومی اسمبلی نے آئندہ مالی سال21-2020 کے لیے وفاقی بجٹ کثرت رائے سے منظور کر لیا۔

اسپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر کی زیر صدارت ہونے والے اجلاس میں وزیراعظم عمران خان بھی ایوان میں موجود تھے۔

وفاقی بجٹ 21-2020ء کے لیے اپوزیشن کی جانب سے تجویز کی گئی تمام ترامیم کو مسترد کردیا گیا۔

اس سے قبل حکومت نے فنانس بل کی شق نمبر کی منظوری میں اپوزیشن کو شکست دی تھی، شق 9 کی حمایت میں 160 اور اس کی مخالفت میں 119 ووٹس دیے گئے تھے۔

قومی اسمبلی سے بجٹ کی منظوری کے بعد سینیٹ سے اس کی منظوری لی جائے گی اور اس کے بعد صدر مملکت اس پر دستخط کریں گے۔

خیال رہے کہ حکومت نے 12 جون کو 71 کھرب 37 ارب روپے کا آئندہ مالی سال کا بجٹ اسمبلی میں پیش کیا تھا۔

بجٹ میں حکومتی آمدنی کا تخمینہ فیڈرل بورڈ آف ریوینیو (ایف بی آر) کی جانب سے محصولات کی صورت میں 4963 ارب روپے اور نان ٹیکس آمدنی کی مد میں 1610 ارب روپے رکھا گیا ہے۔

بجٹ میں 3437 ارب روپے کا خسارہ ہے جو کہ مجموعی ملکی پیداوار (جی ڈی پی) کا 7 فیصد بنتا ہے جب کہ نئے مالی سال کے لیے کوئی نیا ٹیکس نہیں لگایا گیا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں