پاکستان کی بھارت کو کلبھوشن یادیو تک قونصلر رسائی کی باضابطہ پیشکش

اسلام آباد: (ویب ڈیسک) پاکستان نے بھارت کو کلبھوشن یادیو تک قونصلر رسائی کی باضابطہ پیشکش کر دی۔ترجمان دفتر خارجہ کا کہنا ہے قونصلر رسائی کی فراہمی سے متعلق بھارت کے جواب کا انتظار ہے، بھارتی ہائی کمیشن کو آگاہ کر دیا۔ہفتہ وار میڈیا بریفنگ میں ترجمان دفتر خارجہ ڈاکٹر محمد فیصل نے بتایا کہ کلبھوشن یادیو کو قونصلر رسائی کا فیصلہ عالمی عدالت کے فیصلے کی روشنی میں کیا گیا ہے۔ ترجمان دفتر خارجہ نے کہا کہ لائن آف کنٹرول پر بھارت کی جانب سے نہتے شہریوں کو نشانہ بنانا قبول نہیں، بھارت کے غیر ذمہ دارانہ رویہ سے خطے کے امن کو سنگین خطرات لاحق ہیں۔ایک سوال کے جواب میں ترجمان دفتر خارجہ کا کہنا تھا کہ افغان مفاہمتی عمل میں بین الاقومی برادری نے پاکستان کے مثبت کردار کی تعریف کی ہے، افغان طالبان کی وزیراعظم پاکستان کیساتھ ملاقات پر کام ہو رہا ہے۔ امریکی صدر کے دورہ پاکستان کی حتمی تاریخ کے بارے میں ابھی کچھ نہیں کہا جا سکتا۔یاد رہے بھارتی جاسوس کلبھوشن یادیو کو 3 مارچ 2016ء کو پاکستان ایران سرحدی علاقے سے گرفتار کیا گیا تھا، یہ بھارتی جاسوس بھارتی نیوی کا حاضر سروس افسر اور ”را“ کے ایجنٹ کے طور پر کام کر رہا تھا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں