سندھ کابینہ میں ردوبدل، سعید غنی سے بلدیات اور سردار شاہ سے تعلیم کے قلمدان واپس لے لئے گئے

کراچی: سندھ کابینہ میں توسیع کے بعد وزراء کے قلمدانوں میں ردوبدل کردیا گیا۔گزشتہ روز سندھ کابینہ میں 4 نئے وزراء اور 2 مشیروں کو شامل کیا گیا تھا جس کے بعد اب وزراء کے قلمدان بھی تبدیل کیے گئے ہیں۔ سندھ حکومت کی جانب سے قلمدان میں تبدیلیوں کا نوٹیفیکیشن وزیر اعلیٰ سندھ کی اجازت کے بعد جاری کیا گیا۔نوٹیفکیشن کے مطابق قلمدان میں تبدیلیاں بلاول بھٹو زرداری کی ہدایت پر کی گئیں۔ سعید غنی سے بلدیات کا قلمدان واپس لے کر گزشتہ روز حلف اٹھانے والے ناصر حسین شاہ کو سونپ دیا گیا ہے جبکہ سعید غنی کو محکمہ اطلاعات اور محکمہ محنت کا قلمدان دیا گیا ہے۔ سید سردار شاہ سے محکمہ تعلیم کی وزرات واپسی لے لی گئی ہے۔سہیل انور سیال کو آبپاشی کی وزرات دی گئی ہے جبکہ ان کے پاس اینٹی کرپشن کا اضافی قلمدان بھی ہوگا۔ جام اکرام دھاریجو کو امدادِ باہمی اور صنعت و تجارت کی وزارت دی گئی، نثار کھوڑو کو صوبائی مشیر برائے محکمہ ورکس اینڈ سروسز بنایا گیا ہے۔بیرسٹر مرتضیٰ وہاب کو مشیر برائے قانون، ماحول، موسمیاتی تبدیلی اور کوسٹل ڈویلپمنٹ بنادیا گیا ہے جبکہ وہ حکومت سندھ کے ترجمان کی ذمہ داریاں بھی نبھائیں گے۔وزیر بلدیات سندھ ناصر حسین شاہ کا کہنا ہے کہ چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے جو ذمہ داری دی ہے اسے احسن طریقے سے نبھائیں گے، عوام کو ریلیف دینے کے لیے سب کو ساتھ لے کر چلیں گے۔انہوں نے کہا کہ پانی کی فراہمی، نکاسی آب اور کچرا بڑے چیلنجز ہیں، علی زیدی کو ویلکم کرتے ہیں ہر ممکن تعاون کریں گے اور ان کی کامیابی کے لیے دعا گو ہیں۔ناصر حسین شاہ کے مطابق کراچی میں 10 ہزار ٹن کچرا روز اٹھایا جاتا ہے، ایک دفعہ کی مہم سے کام نہیں چلے گا بلکہ روزانہ کام کرنے کی ضرورت ہے۔یاد رہے کہ گزشتہ روز حلف اٹھانے والے وزراء میں ناصر حسین شاہ، سہیل انور سیال، جام اکرام دھاریجو اور عبدالباری پتافی شامل ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں