ایل او سی پر 7 سالہ بچے کی شہادت، بھارتی ڈپٹی ہائی کمشنر کی دفتر خارجہ طلبی

اسلام آباد: پاکستان نے لائن آف کنٹرول (ایل او سی) پر بھارت کی اشتعال انگیزی کے نتیجے میں 7 سالہ بچے کی شہادت پر بھارتی ڈپٹی ہائی کشمنر گورو آہلووالیا کو دفترخارجہ طلب کرکے شدید احتجاج کیا۔ ترجمان دفترخارجہ کے مطابق ڈائریکٹر جنرل جنوبی ایشیاء ڈاکٹر محمد فیصل نے بھارتی ڈپٹی ہائی کمشنر کو طلب کیا اور ایل او سی پر سیز فائر معاہدے کی خلاف ورزی پر پاکستان کا احتجاج ریکارڈ کرایا۔ ترجمان دفتر خارجہ نے بتایا کہ بھارتی افواج نے ایل او سی پر چڑی کوٹ اور تتہ پانی سیکٹر میں بلا اشتعال فائرنگ کی جس کے نتیجے میں ایک 7 سال کا بچہ شہید ہوا۔ ترجمان کا کہنا ہے کہ بھارتی فوج کنٹرول لائن پر تسلسل سے شہری آبادی کو بھاری اسلحہ سے نشانہ بنا رہی ہے، بھارتی کی جانب سے 2017 سے جنگ بندی کی خلاف ورزیوں میں تیزی آئی ہے۔ ترجمان دفتر خارجہ کے مطابق بھارت کی جنگ بندی معاہدے کی خلاف ورزی علاقائی امن وسلامتی کیلئے خطرہ ہے۔ پاکستان نے بھارت پر زور دیا ہے کہ 2003 کے جنگ بندی معاہدے کا احترام کرے اور اپنی افواج کو جنگ بندی پر مکمل عملدرآمد کی ہدایت کرے۔ یاد رہے کہ بھارتی فوج نے مسئلہ کشمیر سے توجہ ہٹانے کیلئے لائن آف کنٹرول پر اشتعال انگیزی کا سلسلہ تیز کردیا ہے۔بھارتی فوج کی جانب سے ایل او سی پر شہری آبادی پر گولہ باری اور فائرنگ کے نتیجے میں کئی شہری اور فوجی جوان شہید ہوچکے ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں