سب مذاق سمجھتے رہے اور ٹرمپ نے سرکاری دورہ ملتوی کردیا

واشنگٹن: ڈنمارک کی جانب سے اپنے خودمختار جزیرے گرین لینڈ کو فروخت کرنے سے انکار پر امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے ڈنمارک کا سرکاری دورہ ملتوی کردیا۔ گزشتہ دنوں ڈونلڈ ٹرمپ نے اپنے مشیران سے کہا تھا کہ اگر امریکا گرین لینڈ کو خریدے لے تو اس کے لیے بہت اچھا ہوگا لیکن اس وقت ٹرمپ کے اس بیان کو سب ڈنمارک، گرین لینڈ اور خود امریکی سیاستدان مذاق سمجھ رہے تھے۔ گرین لینڈ نے بھی ٹرمپ کے اس خیال کو مسترد کرتے ہوئے کہا تھا کہ گرین لینڈ سرمایہ کاری کیلئے کھلا ہے لیکن برائے فروخت نہیں۔ اسی دوران ڈنمارک کی ملکہ مارگریت ثانی نے ڈونلڈ ٹرمپ کو اپنے ملک کا سرکاری دورہ کرنے کی دعوت دی۔ ٹرمپ اور امریکی خاتون اول کو 2 سمتبر کو ڈنمارک کا دورہ کرنا تھا۔ ڈنمارک نے امریکی صدر کے استقبال کی تمام تر تیاریاں بھی کرلی تھیں تاہم عین موقع پر ٹرمپ نے یہ کہہ کر ڈنمارک کا سرکاری دورہ ملتوی کردیا کہ جب ڈنمارک ، گرین لینڈ کو فروخت کرنے میں دلچپسی نہیں رکھتا تو وہ بھی دورہ نہیں کرسکتے۔ سماجی رابطوں کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر جاری پیغام میں ٹرمپ نے کہا کہ ڈنمارک ایک بہت ہی خاص ملک ہے لیکن وہاں کی وزیراعظم میٹ فریڈرکسن کے اس بیان کے بعد کہ وہ گرین لینڈ کو فروخت کرنے کے حوالے سے گفتگو کرنے میں دلچپسی نہیں رکھتیں، میں اپنا دورہ ملتوی کررہا ہوں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں