جنگ مسلط کی گئی تو افواج اور قوم بالکل تیار ہے: شاہ محمود

اسلام آباد: وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے بھارت پر واضح کیا ہےکہ پاکستان کے پاس جنگ کا کوئی آپشن نہیں لیکن جنگ مسلط کی گئی تو افواج اور قوم بالکل تیار ہے۔ برطانوی نشریاتی ادارے کو دیے گئے انٹرویو میں شاہ محمود قریشی نے کہا کہ بھارت مقبوضہ کشمیر سےکرفیو ختم، حقوق بحال اور کشمیری قیادت کو رہا کرے، بھارت تینوں اقدامات کرے تو مذاکرات ہو سکتے ہیں، پاکستان نے بھارت سے مذاکرات سے کبھی انکار نہیں کیا البتہ بھارت کی جانب سے مذاکرات کا ماحول دکھائی نہیں دے رہا۔ انہوں نے کہا کہ تنازع کے تین فریق ہیں، بھارت، پاکستان اور کشمیر، بھارت سنجیدہ ہے تو پہلے کشمیری رہنماؤں کو رہا کرے، بھارت مجھے اجازت دے کہ کشمیری قیادت سے مل کرمشاورت کر سکوں، مجھے کشمیریوں کے جذبات دیکھنا پڑیں گے کیونکہ ان کے جذبات کو روند کر مذاکرات کی میز پر نہیں بیٹھا جا سکتا۔ وزیر خارجہ کا کہنا تھا کہ پاکستان کے پاس جنگ کا کوئی آپشن نہیں ہے، پاکستان نے کبھی جارحانہ پالیسی نہیں اپنائی، اس کی ترجیح ہمیشہ امن ہے، جنگ سے لوگوں کی بربادی ہو گی، دنیا بھی اس سے متاثر ہوگی تاہم جنگ مسلط کی گئی تو 26 فروری کی طرح افواج پاکستان اور قوم بھی تیار ہے، مؤثر غزنوی میزائل کا تجربہ کیا گیا ہے، قوم تیار ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں