کرونا وائرس، پی آئی اے کپتانوں کے مطالبات تسلیم کرنے کے لئے تیار

کراچی (ویب ڈیسک) پی آئی اے انتظامیہ پائلٹس کے مطالبات تسلیم کرنے کے لئے تیار ہو گئی ہے۔ ترجمان پی آئی اے نے بتایا ہے کہ ڈائریکٹر فلائٹ آپریشنز پالپا کے وفد سے مذاکرات کریں گے اور ان کے جائز مطالبات حل کیے جانے کے بھی امکانات ہیں۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ پی آئی اے انتظامیہ ان نکات پر رضامند ہو گئی ہے کہ وہ پائلٹس کو کرونا وائرس سے بچاؤ کا سامان فراہم کرے گی اور طیارے میں اڑنے سے قبل تین مرتبہ اسپرے بھی کیا جائے گا۔
گذشتہ روز پائلٹس کی جانب سے طیارے اڑانے سے انکار کیا گیا تھا۔ ان کے تحفظات تھے کہ ان کو کرونا وائرس سے بچاؤ کا سامان نہیں دیا جاتا۔ خیال رہے کہ 21 مارچ کو یونائیٹڈ ٹی وی نے اپنے ذرائع سے ایسی معلومات حاصل کرکےدرج ذیل خبر کی صورت میں پی آئی اے کے غیر ذمہ دارانہ عمل کی نشاندہی کی تھی۔
“قومی ایئرلائن میں ملازمین کے لئے انسدادِ کرونا وائرس اقدامات نہ ہونے کا انکشاف ہوا ہے۔ ذرائع کے مطابق پی آئی اے کے تکنیکی عملے میں کام کرنے والے ایک ملازم کو کرونا وائرس کی علامات ظاہر ہونے کی تصدیق کی گئی ہے۔ ملازم کراچی میں پی آئی اے ٹاؤن شپ میں واقع بیچلر ہاسٹل کے بلاک اے کا رہائشی ہے ۔ کراچی سے بذریعہ پی آئی اے پرواز پی کے 350 پشاور پہنچنے پر ان کو کرونا وائرس کی علامات ظاہر ہوئیں جن کو فوری طور پر پشاور کے قرنطینہ سینٹر منتقل کیا گیا ہے۔
ذرائع نے یہ بھہ دعویٰ کیا ہے کہ حالیہ دنوں میں قومی ایئرلائن کی جانب سے اپنے ملازمین کے لئے انسدادِ کرونا وائرس کے متعلق کوئی اقدامات نہیں اٹھائے گئے ہیں ۔ مختلف اسٹیشنز پر کام کرنے والے تکنیکی اور انجنیئرنگ اسٹاف کو سیفٹی کے لئے کچھ فرایم کیا گیا ہے نہ یہ ان کی ملازمت کے اوقات میں کمی کی گئی ہے۔”
پی آئی اے کی اس غفلت کے بعد پورے ملک کو خطرات لاحق ہوگئے ہیں کیونکہ روزانہ ہزاروں مسافرین قومی ایئرلائن کے ذریعے سفر کرتے ہیں جس سے وائرس کے زیادہ سے زیادہ پھیلنے کا خدشہ رد نہیں کیا جا سکتا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں