کرونا وائرس، صوبائی اور وفاقی حکومت کے اعداد و شمار میں تضاد

کراچی(رپورٹ، سالار لطیف) پاکستان میں کرونا وائرس کے بعد عوام متعدد مشکلات کا شکار ہے۔ایک طرف لاک ڈاؤن کے باعث غربت سے دوچار عوام کے ایک بہت بڑے حصے کے لئے زندگی مزید بوجھ بن چکی ہے تو دوسری جانب سوشل میڈیا پر وائرس سے متعلق گردش کرنے والی افواہیں عوام کے لئے کسی عذاب سے کم نہیں ہیں۔ ایسے میں تصدیق شدہ معلومات اور کرونا وائرس سے متعلق حقیقی اعداد و شمار اور دیگر اطلاعات حاصل کرنا ایک بہت بڑے چیلنج کے طور پر ابھر کر سامنے آیا ہے۔
اس تمام تر صورتحال میں میڈیا کا کردار انتہاہی اہمیت کا حامل ہے جس کے دوران میڈیا کی جانب سے ذمہ داری کا مظاہرہ وقت کی اہم ضرورت ہے۔ حکومت کی جانب سے کرونا وائرس سے متعلق پے در پے آنے والی خبروں کی بھیڑ میں ایک اور نقطہ عوام کی توجہ سے اوجھل ہے۔ حکومت کی جانب سے جاری کردہ اعداد و شمار کی تصدیق پر سوالیہ نشان لگ گئے ہیں۔
پاکستان میں کرونا وائرس سے متعلق صوبائی اور وفاقی حکومت کی جانب سے جاری کردہ اعداد و شمار میں بہت بڑا فرق دیکھا گیا ہے۔ 6 اپریل پر پنجاب حکومت کی جانب سے میڈیا کو موصول ہونے والی اطلاعات کے مطابق پنجاب میں 191 متاثرین سامنے آئے ہیں جس کے بعد صوبے میں کرونا وائرس کے کیسز کی مجموعی تعداد 1684 ہوگئی ہے جبکہ دو مزید کرونا وائرس متاثرین فوت ہو گئے ہیں۔ پنجاب میں کرونا وائرس کے باعث ہونے والی اموات کی تعداد 15 ہے جبکہ اس کے برعکس وفاقی حکومت کی کرونا وائرس ویب سائٹ پر پنجاب میں کرونا وائرس سے متاثرہ کیسز کی تعداد 1493 بتائی جا رہی ہے۔

پنجاب حکومت کی جانب سے جاری کردہ انہی اعداد و شمار میں 15 اموات رپورٹ کی گئی ہیں۔ ان اموات کی تفصیلات سے متعلق جاری کردہ اطلاعات میں بتایا گیا کہ 7 لاہور، 4 راولپنڈی، ایک رحیم یار خان، ایک فیصل آباد اور ایک کا تعلق گجرات سے تھا۔جاری کردہ تفصیلات کی روشنی میں اموات کی تعداد 14 ہو رہی ہے ۔ سوال یہ ہے کہ پنجاب میں ایک مزید موت کی تفصیلات کہاں ہے؟ اگر وہ نہیں ہے تو اموات کی تعداد سے متعلق جاری کردہ اعداد و شمار میں غیرذمہ داری کا ذمہ دار کون اور کیوں ہے؟
حکومتِ سندھ کے ترجمان مرتضٰی وہاب نے اپنے ٹویٹ میں کہا ہے کہ صوبہ میں کرونا وائرس سے متاثرہ کیسز کی تعداد 932 ہے جبکہ وفاقی حکومت کی ویب سائٹ پر سندھ میں کرونا وائرس کی تعداد 881 بتائی جا رہی ہے تاہم سندھ میں کرونا وائرس سے ہونے والی اموات سے متعلق جاری کردہ اعداد و شمار میں بھی تضاد دیکھنے میں آیا ہے۔ حکومتِ سندھ کے مطابق صوبہ میں 17 اموات ہو چکی ہیں جبکہ وفاقی حکومت کے پورٹل پر سندھ میں کرونا وائرس سے ہونے والی اموات کی تعداد 15 بتائی جا رہی ہے۔ سندھ میں کرونا وائرس سے صحتیاب ہونے والے افراد کی تعداد سے متعلق صوبائی حکومت کا کہنا ہے کہ 253 افراد اب تک صحتیاب ہو چکے ہیں لیکن وفاقی حکومت کی ویب سائٹ پر ان افراد کی تعداد 123 بتائی جا رہی ہے۔

ترجمان حکومتِ سندھ مرتضٰی وہاب نے 6 اپریل یعنی آج صبح 8 بجے تک کے اعداد و شمار جاری کیے ہیں لیکن وفاقی حکومت کی ویب سائٹ پر دیکھا جا سکتا ہے کہ پورٹل 9 بجکر 11 منٹ پر اپڈیٹ ہوا جس کے باوجود بھی اعداد و شمار میں واضح فرق دیکھا گیا۔
خواہ حکومت انسدادِ کرونا وائرس اقدامات میں ہر ممکن ذرائع بروئے کار لاتے ہوئے دن رات محنت میں مصروفِ عمل ہے لیکن اعداد و شمار کا یہ تضاد ایک انتہائی اہم مسئلہ ہے جس پر سوالیہ نشان جائز ہیں کیونکہ پاکستان میں اسے قبل ہی ایسے بحث گردش کررہے ہیں کہ حکومت کی جانب سے کرونا وائرس کے اعداد و شمار ظاہر نہیں کیے جا رہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں