احساس کفالت، ملیر میں انتظامیہ کی غفلت سے کرونا وائرس پھیلنے کا خدشہ

ملیر (نامہ نگار، منظورسولنگی ) وفاقی حکومت کی جانب سے کرونا وائرس سے اور لاک ڈاوَن سے متاثر غریب خاندانوں اور دہاڑی دار مزدوروں کی مالی معاونت کیلئے احساس کفالت پروگرام کے تحت فی کس 12ہزار روپے کی رقم فراہم کرنے کیلئے ضلع ملیر میں قائم کیے گئے مختلف علاقوں ابراہیم حیدری، بھینس کالونی، قائد آباد، ملیر، میمن گوٹھ، گٖڈاپ، رزاق آباد، گلشن حدید، پپری و دیگر علاقوں میں گذشتہ روز رقوم کی تقسیم اور آنے والے ایس ایم ایس کی تصدیق کیلئے سینکڑوں کی تعداد میں عورتیں پہنچ گئیں جن کیلئے شدید گرمی اور کرونا وائرس کو پھیلنے سے روکنے کیلئے حکومت کے نافذ احکامات پر عمل درآمد کیلئے مقامی انتظامیہ کوئی انتظام نہیں کرسکی جس کے باعث شدید گرمی اور عورتوں کی بھیڑ کے باعث رزاق آباد و دیگر علاقوں میں متعدد عورتوں کے بیہوش ہونے کی اطلاع موصول ہوئی ہیں۔ لوگوں نے تشویش کا اظہار کرتے ہوئے بد نظمی کے باعث کرونا کے پھیلنے کا اندیشہ ظاہر کیا ہے۔ اس سلسلے میں کراچی میں تیزی سے پھیلنے والے کرونا وائرس پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے سندھ کے وزیرِ اعلیٰ مراد علی شاہ نے اس سلسلے میں ملیر ضلع کا ذکر کیا ہے اور کہا ہے کہ اس ضلع میں کرونا وائرس کمزور تھا جو اب تیزی سے پھیل رہا ہے جس کو روکنے کیلئے انتظامیہ کو مزید سختی کی ہدایات کی گئیں ہیں لیکن تاحال احساس کفالت پروگرام کے تحت عورتوں کے جمع ہونے اور انہیں با عزت طریقے سے رقوم مہیا کرنے میں انتظامیہ مکمل طور پر ناکام ہوگئی ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں