کرونا وائرس کہاں تیار ہوا؟ ایک حیرت انگیز انکشاف

کراچی (ویب ڈیسک) کرونا وائرس نے دنیا بھر میں اپنی دہشت سے معمولاتِ زندگی مفلوج بنا رکھے ہیں۔ وائرس کے حوالے سے دنیا بھر میں متعدد افسانے گردش کررہے ہیں اور اس سے متعلق امریکہ اور چین کے مابین بھی سرد جنگ کا آغاز ہو چکا ہے۔ امریکہ کا کہنا ہے کہ وائرس چین کے شہر ووہان میں بنایا گیا جہان سے چینی ماہرین کی غلطی کے باعث وائرس پھوٹ پڑا اور اس نے دیکھتے ہی دیکھتے دنیا بھر کو اپنی لپیٹ میں لے لیا تاہم چین بھی وائرس کے حوالے سے اس طرح کے الزامات امریکہ پر عائد کرتا آیا ہے۔
امریکی نشریاتی ادارے “فوکس نیوز” نے اپنی ایک رپورٹ میں کرونا وائرس سے متعلق ایک نیا انکشاف کیا ہے اور اس کی تیاریوں کے حوالے سے ہونے والے ان انکشافات کو منظرِ عام پر لانے کے لئے کچھ امریکی اور برطانوی خبررساں ویب سائٹس کا سہارہ لیا گیا ہے۔
حال ہی میں جاری کردہ اپنی رپورٹ میں “فوکس نیوز” نے لکھا ہے کہ کینیڈین و امریکی حکومتوں نے ووہان انسٹی ٹیوٹ آف ورولاجی کو متعدد تجربات کرنے کے لیے لاکھوں ڈالرز کے فنڈز فراہم کیے اور بعد ازاں کرونا وائرس سامنے آنے کے بعد بھی دونوں ممالک کی حکومتوں نے اسی انسٹی ٹیوٹ کے ساتھ مل کر کام کرنے کے عزم کیا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں