جنوبی پنجاب صوبہ بنا رہے ہیں، آرٹیکل 51 میں ترمیم سے نیا صوبہ وجود میں آئے گا: شاہ محمود قریشی


ملتان (ویب ڈیسک) حکومت نے جنوبی پنجاب صوبہ بنانے کے لیئے مسلم لیگ (ن) سمیت پارلیامنٹ میں موجود تمام جماعتوں سے مدد طلب کرلی ہے، ملتان میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے وفاقی وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا کہ جنوبی پنجاب کے لوگوں کو الگ شخصیت دینے کا وعدہ کیا تھا، قومی اسمبلی میں تحریک انصاف نے اپنے وعدے پر پیش رفت کی، دو روز قبل آئینی ترمیمی بل پیش کردیا گیا جو کثرت رائے سے منظور ہوا، اسپیکر قومی اسمبلی آئینی ترمیم پر ایک اسپیشل کمیٹی بنا رہے ہیں۔ شاہ محمود قریشی نے بتایا کہ آئین کے آرٹیکل 51 میں ترمیم سے جنوبی پنجاب صوبہ وجود میں آئے گا جو ملتان، بہاولپور اور ڈیرہ غازی ڈویژن پر مشتمل ہوگا۔ انہوں نے کہا کہ ایک صوبہ بنے گا تو اس کی علیحدہ اسمبلی کا وجود بھی ضروری ہے، جنوبی پنجاب اسمبلی کی کل سیٹیں 120 ہوں گی جس میں 95 منتخب ممبران کی ہوں گی، اس طرح اپر پنجاب کی سیٹیں 251 رہ جائیں گے۔ وزیر خارجہ کا کہنا تھا کہ جنوبی پنجاب کی علیحدہ ہائیکورٹ ہوگی اور اپنا چیف جسٹس ہوگا، نئے صوبے کے بعد پاکستان کے صوبے پانچ ہوجائیں گے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں