ڈاکٹرز نے لاک ڈاؤن میں نرمی کو خطرناک قرار دے دیا

کراچی (ویب ڈیسک) ڈاکٹرز نے لاک ڈاؤن میں نرمی کے حکومتی فیصلے کو مسترد کردیا۔ چیف ایگزیکٹو آفیسر انڈس ہسپتال ڈاکٹر عبدالباری خان کی رہنمائی میں ڈاکٹرز کے ایک وفد نے کراچی پریس کلب میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے حکومت کو لاک ڈاؤن میں نرمی سے پیدا ہونے والے خطرات سے آگاہ کیا۔ ان کا کہنا تھا کہ لاک ڈاؤن میں نرمی کا فیصلہ کرونا وائرس کے خطرناک حد تک پھیلاؤ کا باعث بن سکتا ہے۔
پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے ڈاکٹر عبدالباری خان نے کہا ہے کہ گذشتہ کچھ روز کے دوران حکومت کی جانب سے لاک ڈاؤن میں جزوی طور پر نرمی کے بعد کرونا وائرس کے مقامی منتقلی کے کیسز میں تیزی سے اضافہ ہوا ہے جس کے باعث کراچی کی ہسپتالوں میں دباؤ میں اضافہ ہوا ہے اور ڈاکٹرز کے لئے مشکلات پیدا ہوئی ہیں۔
جامعہِ ڈاؤ برائے طب کے ڈاکٹر سعد نیاز نے انتباہ کرتے ہوئے کہا کہ لاک ڈاؤن میں نرمی کی صورت میں اس حد تک کیسز بڑھ سکتے ہیں کہ ہماری ہسپتالوں میں بیڈ کم پڑ سکتے ہیں، ایسی صورتحال میں مشکلات پیدا ہو جائیں گی جن سے نمٹنے کے لئے نظام ہی موجود نہیں ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ کرونا وائرس کی شدت ہماری سوچ سے بہت زیادہ ہے۔ وائرس سے بچاؤ کے لئے لوگوں کو احتیاط کرنا چاہئے۔
ڈاکٹرز کے وفد کا مزید کہنا تھا کہ عوام سے التماس کرتے ہیں کہ کرونا وائرس کو مناسب صورتحال سمجھنا عقلمندی نہیں ہے۔ ایسے میں اس جان لیوا وبا کے خلاف صفِ اول میں لڑنے والے شعبہِ طب کے کارکنان کے لئے بہت مشکل پیدا ہو جائے گی۔ اس موقع پر انہوں نے ایک مرتبہ پھر حکومت کو یاداشت نامہ پیش کرتے ہوئے آگاہ کیا کہ اگر لاک ڈاؤن میں نرمی کی گئی تو حالات قابو سے باہر جا سکتی ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں