ڈاکٹرز کی جانب سے لاک ڈاؤن میں سختی کا مطالبہ

کراچی (ویب ڈیسک) کرونا وائرس کے پھیلاؤ کو روکنے کے لئے لاک ڈاؤن میں نرمی اور حکومت کی جانب سے رمضان المبارک کے دوران نمازِ تراویح اور عبادات کی مشروط اجازت پر ڈاکٹروں کے اعتراض سامنے آگئے۔ انہوں نے اس عمل کو کرونا وائرس کے خطرناک حد تک پھیلنے کا ذریعہ قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ اس سے کرونا وائرس میں شدت بڑھ سکتی ہے جس کے باعث پیدا ہونے والی صورتحال سے نمٹنے کے لئے ہمارے پاس نظام ہی موجود نہیں ہے۔
پاکستان اسلامک میڈیکل ایسو سی ایشن کے داکٹر عاطف حفیظ نے خبردار کیا ہے کہ لاک ڈاؤن میں سختی اور ہر طرح کے اجتماعات پر مکمل پابندی سے ہی کرونا وائرس کے پھیلاؤ کو روکا جا سکتا ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ اس طرح کے اقدامات سے غریب اور مستحقین کے لئے مشکلات پیدا ہو سکتی ہیں لیکن اس میں مخیر حضرات سمیت غیر سرکاری تنظیموں اور حکومت کو مل کر ان کی مدد کرنی چاہیے اور ان کے مسائل حل کیئے جائیں۔ لاک ڈاؤن میں نرمی سے کرونا وائرس خطرناک حد تک بڑھ سکتا ہے اس لئے حکومت کو من و عن ایسے فیصلے پر نظرثانی کرنی چاہئے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں