محرم الحرام کے دوان امن و امان قائم رکھنے کے لیے سخت حفاظتی انتظامات کیے جائیں گے: ڈپٹی کمشنر گھوٹکی لیفٹیننٹ رٹائرڈ محمد خالد سلیم

گھوٹکی ( رپورٹ: جعفر شخ)     ڈپٹی کمشنر گھوٹکی لیفٹیننٹ رٹائرڈ محمد خالد سلیم نے کہا ہے کہ ضلع گھوٹکی میں مذہبی ہم آہنگی موجود ہے اس کے باوجود ملک کی موجودہ صورتحال کے پیش نظر محرم الحرام کے دوران ملک دشمن قوتیں فساد پھیلانے کی کوشش کر سکتی ہیں اس لیے ہمیں متحد ہوکر ملک و قوم کے مشترکہ دشمن کو شکست دینی ہوگی۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے اپنے دفتر میں محرم الحرام کے دوران امن و امان قائم رکھنے کے سلسلے میں منقعدہ ایک اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کیا۔ اجلاس میں شہباز رینجرز سردار گڑہ کے ونگ کمانڈر کرنل نیئر اور ایس ایس پی ڈاکٹر فرخ لنجار سمیت اسسٹنٹ کمشنرز، ڈی ایچ او، ڈی ایس پیز، محکمہ میونسیپل سیپکو اور متعلقہ  افسران سمیت مختلف مکتبہ فکر کے علماء نے شرکت کی۔ اس موقع پر ڈپٹی کمشنر نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ محرم الحرام کے دوان امن و امان قائم رکھنے کے لیے سخت حفاظتی انتظامات کیے جائیں گے اس سلسلے میں کسی کو بھی قانون ہاتھ میں اٹھانے کی اجازت نہیں دی جائے گی جبکہ ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی کرنے والوں کے خلاف سخت کارروائی کریں گے. انہوں نے کہا  کہ اجلاس منقعد کرنے کا مقصد تمام مکتبہ فکر کے علماء کو چاہیے کہ وہ حکومت سندھ کی جانب سے جاری کردہ ضابطہ اخلاق پر عمل کو یقینی بنائیں اور ضلعی انتظامیہ سے مکمل تعاون کریں کیوں کہ اسلام ہمیں محبت، امن، صبر و رواداری کا درس دیتا ہے اس لیے ہمیں چاہیے کہ ہم ایک دوسرے کے جذبات کا احترام کریں تاکہ کسی کی بھی دل آزاری نہ ہو اور ایامِ عاشورہ خوش اصلوبی سے گذر جائیں تاکہ ملک دشمن عناصر ناکام ہوں۔ انہوں نے کہا کہ محرم الحرام کے دوران ضلعی انتظامیہ کی اجازت کے بغیر لاؤڈ اسپیکر استعمال نہیں کیا جاسکتا جبکہ لاؤڈ اسپیکر کے غلط استعمال اور اسلحہ کی نمائش پر بھی مکمل پابندی ہوگی خلاف ورزی کرنے والوں کے خلاف سخت قانونی کارروائی کی جائے گی۔ انہوں نے تمام مکتبہ فکر کے علماء سے اپیل کرتے ہوئے کہا کہ محرم کے دوران افواہوں پر توجہ دینے کے بجائے صبر کا مظاہرہ کرتے ہوئے کسی بھی ناخوشگوار واقع کی اطلاع فوری طور پر ضلعی انتظامیہ کو دی جائے جبکہ ماتمی جلوس اور مجالس مقرر کردہ وقت پر کی جائیں تاکہ ضلعی انتظامیہ بہتر سے بہتر حفاظتی انتظامات کر سکے۔ اس موقع پر ڈپٹی کمشنر نے ڈی۔ایچ۔او کو ہدایت کی کہ ضلع بھر کی اسپتالوں میں ڈاکٹر اور پیرا میڈیکل اسٹاف سمیت ایمبولینسز موجود ہونی چاہیں تاکہ کسی بھی ناخوشگوار واقع سے نمٹا جاسکے۔ انہوں نے سیپکو اور پی ٹی سی ایل کے افسران کو کہا کہ وہ اپنی لوز کیبلز کی مرمت کروائیں خصوصی طور پر جلوسوں والے روٹس پر توجہ دی جائے اور  غیر اعلانیہ لوڈشیڈنگ سے گریز کیا جائے۔انہوں نے تمام ٹی ایم اوز کو بھی ہدایت دی کہ وہ عاشوروں کے دوران اسٹریٹ لائیٹ، واٹر سپلائی، ڈرینیج اور صفائی کا خاص خیال رکھیں اور مین گٹرز کو فوری طور پر بند کریں اس سلسلے میں کسی قسم کی کوتاہی برداشت نہیں کی جائے گی۔ انہوں نے مزید بتایا کہ ڈپٹی کمشنر آفیس میں محرم کے دوران ایک کنٹرول روم قائم کیا جائے گا جہاں پر 24 گھنٹے عملدار موجود ہوں گے  تاکہ لوگوں کی شکایات کا فوری ازالہ کیا جاسکے۔ اس موقع پر شہباز رینجرز سردار گڑہ کے ونگ کمانڈر کرنل نیئر نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ گذشتہ سال محرم الحرام کے دوران ضلع بھر میں کوئی بھی ناخوشگوار واقعہ پیش نہ آیا جو رپورٹ ہوسکے، امید کرتے ہیں کہ اب بھی تمام علماء کرام ایک دوسرے سے تعاون کریں گے تاکہ محرم الحرام کے دوران امن و امان قائم قائم رہ سکے۔اس موقع پر ایس ایس پی نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ سندھ کے دیگر اضلاع کی نسبت ضلع گھوٹکی کی تاریخ رہی ہے کہ یہاں پر کبھی بھی فرقیوارانہ تصادم نہیں ہوا، اس لئے تمام علماء کرام کو چاہیے کہ وہ ان مولویوں کو ضلع میں دعوت نہ دیں جن پر حکومت نے پابندی عائد کی ہوئی ہے اور ضابطہ اخلاق پر مکمل عمل کرتے ہوئے مجالس و جلوسوں کے دوران مشکوک لوگوں پر نظر رکھی جائے تاکہ محرم الحرام کے ایام خوش اصلوبی سے گذر جائیں۔انہوں نے بتایا کہ ضلع بھر میں 596 مجالس منقعد ہوں گی اور جلوس برآمد ہوں گے اس سلسلے میں تمام حفاظتی انتظام مکمل کرلئے گئے ہیں۔ اس موقع پر تمام مکتبہ فکر کے علماء کرام نے ضلعی انتظامیہ کو مکمل تعاون کی یقین دہانی کروائی۔ بعد ازاں ملک کی سلامتی و خوشحالی، کشمیر کی آزادی اور ملک و قوم کی خاطر جان کا نظرانہ پیش کرنے والے تمام شہداء کے لئے اجتماعی دعا مانگی گئی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں