دادو: سانپ کے ڈسنے سے نوجوان کا علاج بروقت نہ ہونے سے جاں بحق

دادو(رپورٹ:فیاض جعفری) سندھ کی سرکاری ہسپتالوں میں بے حسی نے ایک اور ماں کی گود اجاڑ دی، علاج معالجہ نہ ہونے پر ماں کی آنکھوں کے سامنے بیٹا تڑپ تڑپ کہ دم توڑ گیا، سرکاری ہسپتال دادو میں سہولیات کے عدم فراہمی نے ماں سے لخت جگر چھین لیا۔خیرپور ناتھن شاہ کا رہائشی 16 سالہ نوجوان طارق کھوسو کو سانپ کے ڈسنے سے دادو کی سرکاری اسپتال لایا گیا، ویکسین نہ ملنے پر متاثرہ نوجوان اپنے ماں کے سامنے تڑپ تڑپ کر جاں بحق ہوگیا۔

جاںبحق نوجوان کی والدہ کا کہنا ہے کہ بیٹے کو ڈاکٹر ویکسین لگاتے تو وہ بچ جاتا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں