سندھ کووِڈ 19 ایمرجنسی ریلیف آرڈیننس 2020′ کیا ہے؟

کراچی،ویب ڈیسک
سندھ کابینہ نے ‘سندھ کووڈ 19 ایمرجنسی ریلیف آرڈیننس 2020’ منظورکیا ہے جس کے تحت صوبے میں کسی کو نوکری سے نہیں نکالا جائےگا اور پانی، بجلی اور گیس کے کم سطح کے بل نہیں لیےجائیں گے۔
کووڈآرڈیننس کے تحت کسی کو نوکری سے نہیں نکالا جائےگا اور 50 ہزار سےکم تنخواہ والوں کو مکمل تنخواہ دی جائےگی جب کہ تعلیمی ادارے 80 فیصد فیس لے سکیں گے۔
کووڈ آرڈیننس کے تحت 50 ہزارروپے سے کم کرائے والوں سے کرایا نہیں لیا جائےگا جب کہ 50 سے زیادہ کرایہ والوں کو بقیہ رقم بعد میں دینی ہوگی اور بیوہ یا ضعیف افراد اگر مالک مکان یا دکان کےمالک ہیں تو انہیں کرایہ دینا ہوگا۔
ترجمان سندھ حکومت نے بریفنگ میں بتایا کہ کووڈ آرڈیننس کے تحت پانی، بجلی اور گیس کے کم لیول کے بل نہیں لیےجائیں گے۔
دوسرے آرڈیننس کے تحت ذخیرہ اندوزی اور قیمتیں بڑھانےوالوں کو10 لاکھ روپےتک جرمانہ ہوگا۔
دونوں آرڈیننس گورنر سندھ کی منظوری کے بعد آرڈیننس نافذالعمل ہونگے۔

تحریکِ انصاف کا سندھ حکومت کا کووڈ ریلیف آرڈیننس عدالت میں چیلنج کرنے کا اعلان۔

اپنا تبصرہ بھیجیں