لاڑکانہ، لاک ڈاؤن کے دوران ہسپتال جاتے شہری پر پولیس کا تشدد

لاڑکانہ (نامہ نگار، نور احمد عباسی) لاک ڈاؤن کی آڑ میں پولیس کی زیادتیاں تھم نہ سکیں۔ ایک اور مجبور باپ لاک ڈاؤن و پولیس زیادتیوں کے دوہرے عذاب کا شکار ہو گیا۔ ڈبل سواری کے جواز پر پولیس کی جانب سے بیمار بچے کو ہسپتال لے جانے والے باپ پر مبینہ تشدد کی اطلاعات ملی ہیں۔
باقرانی روڈ پر واقع چوکی انچارج نے مبینہ طور پر شہری سلطان کھوسو کو تشدد کا نشانہ بنایا جس کے نتیجے میں شہری لہو لہان ہوگیا۔ تفصیلات کے مطابق اللہ آباد کا رہائشی متاثرہ سلطان کھوسو اہلخانہ کے ہمراہ بیمار بیٹی کو ہسپتال لے جا رہا تھا جس نے میڈیا کو بتایا کہ پولیس نے خاتون اور بچی دیکھنے کے باوجود بھی روکا اور تلخ کلامی کر کے تشدد کیا۔ بیمار بیٹی کے علاج اور ادویات کی پرچیاں دکھانے کے باوجود بھی تشدد کا نشانہ بنایا گیا ہے۔ متاثرہ شہری نے اعلیٰ حکام سے نوٹس لینے کا مطالبہ کیا ہے۔
دوسری جانب صوبائی وزیر سہیل انور سیال نے واقعے کا نوٹس لے لیا ہے۔ صوبائی وزیر نے جاری کردہ بیان میں کہا ہے کہ ہسپتال جانے کے دوران بیمار شہریوں کی آمد و رفت پر کوئی پابندی نہیں ہے۔ سلطان کھوسو نامی شہری پر مبینہ تشدد کی تحقیقات کروائی جائیں گی جس سے متعلق ایس ایس پی لاڑکانہ مسعود بنگش کو ہدایات دے دی گئیں ہیں۔ تحقیقات میں سامنے آنے والے حقائق کی بنیاد پر کارروائی کو یقینی بنایا جائے گا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں