ملیر، رہنما ایم کیو ایم پاکستان کی مقتولہ حمیرا کے گھر آمد

ملیر (نامہ نگار، منظورسولنگی) رہنما متحدا قومی موومنٹ (پاکستان) منظور جوکھیو خدمتِ خلق فاونڈیشن کے ارکان کے ہمراہ ملیر میں شوہر کے ہاتھوں آگ لگا کر ہلاک والی والی خاتون کے والد غلام ربانی جوکھیو کے گھر پہنچے۔ اس موقع پر انہوں نے لواحقین کے ساتھ واقعہ پر اظہارِ افسوس کیا اور واقعے کی تفصیلات حاصل کیں۔
غلام ربانی نے انہیں واقعہ کی تفصیلات سے متعلق بتایا کہ گھریلو تنازعہ کے باعث میری بچی حمیرہ جوکھیو کو اس کے شوہر ولی محمد جوکھیو نے تشدد کے بعد کمرے میں بند کرکے پیٹرول چھڑک کر آگ لگا دی۔ افسوس کا مقام یہ ہے کہ شاہ لطیف پولیس نے ایک انسان کی زندگی سے کھیلنے والے درندے کےخلاف تاحال کوئی کارروائی نہیں کی۔ 25اپریل کو رونما ہونے والے واقعے کا تین روز بعد مقدمہ درج کیا گیا اور اب مایوس کن تفتیش جاری ہے۔
تفصیلات حاصل کرنے کے بعد ایم کیو ایم پاکستان کے رہنما منظور جوکھیو نے واقعے کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے انہیں ہر ممکن قانونی و اخلاقی مدد کا یقین دلایا۔ انہوں نے کہا کہ حکومتِ سندھ اور انسانی حقوق کی تنظیمیں گھریلو تشدد اور عورتوں کی ہلاکتوں کے واقعات کو سنجیدگی سے لیں اور ملوث ملزمان کے خلاف اقدامات کریں تاکہ آئندہ ایسے واقعات پیش نہ آئیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں