ملیر، مقتول بچے کے قاتل گرفتار

ملير (نامہ نگار، منظورسولنگی) تھانہ اسٹیل ٹاؤن کی حدود سومار گوٹھ میں مبینہ طور پر جنسی زیادتی کا نشانہ بننے کے بعد قتل ہونے والے 7 برس کے معصوم بچے دوست علی لغاری کا قتل کیس والد صابر لغاری کی مدعیت میں تھانہ اسٹیل ٹاؤن پر مقدمہ درج کیا گیا ہے جس میں مدعی کی طرف سے نامزد چاروں ملزمان راجو جعفری، جاوید جعفری، سکندر مگسی اور دلشیر مگسی کو پولیس نے چھاپہ مار کر سومار گوٹھ سے گرفتار کرلیا ہے۔
دوسری جانب سندھیانی تحریک کی رہنما یاسمین چانڈیو اور عوامی پریس کلب ملیر کے صحافیوں نے فوتی بچے کے گھر پہنچ کر تعذیت کی اور واقعے کی تفصيلات حاصل کیں۔ اس موقع پر فوتی بچے کے والد صابر علی نے صحافیوں کو بتایا کہ میرے بیٹے کے قتل میں نامزد ملزمان نے زیادتی کے بعد قتل کردیا کیونکہ اس نے ملزمان کو پہچان لیا تھا۔
اس نے مزید کہا کہ گھر کا مالک طارق مگسی اپنا گھر کرایہ پر چڑھانے کے لئے پارٹی کو لیکر جیسے گھر پہنچا اور تالا کولل کر اندر داخل ہوا تو میرے بچے کی لاش پڑی تھی جس نے ہمیں فون کرکے اطلاع دیا۔ اسٹیل ٹاؤن پولیس نے نامزد تمام ملزمان گرفتار کر لئے گئے ہیں۔
مقتول بچے کے والد نے مطالبا کیاکہ مجرموں کو قانونی شکنجے میں لاکر انصاف کیا جائے۔ ایس ایچ او اور ڈی ایس پی نے متاثرین کے گھر پہنچ کر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ مدعی کی مرضی کے مطابق مقدمہ درج کیا گیا ہے اور شفاف تفتیش کرکے جلد ہی حقیقت سامنے لائی جائے گی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں