ملیر، لاک ڈاؤن کے خلاف دیگین رکھ کر انوکھا احتجاج

ملیر (نامہ نگار، منظورسولنگی) گلشنِ حدید کے قریب قومی شاہراہ پر کرونا وائرس کے پھیلاؤ کو روکنے کے لیے لگائے گئے لاک ڈاؤن کے باعث کاروبار کی بندش اور سیکڑ وں کی تعداد میں ملازمین کے بیروزگار ہونے کے خلاف پکوان سینٹرز، کیٹرنگ مالکان اور ملازمین نے آل کراچی کیٹرز اینڈ ڈیکوریٹرز ایسوسی ایشن کے صدرراو محمدوقاص کی قیادت میں دیگیں رکھ کر انوکھا احتجاجی مظاہرہ کیا۔ مظاہرے میں پکوان سینٹرز اور کیٹرنگس مالکان نے بڑی تعداد میں شرکت کی اور کاروبار کی بحالی کے حوالے سے فلک شگاف نعرے لگائے۔
اس موقع پر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کیٹرز اور ڈیکوریٹرز ایسوسی ایشن کے صدر راؤ محمدوقاص، نائب صدر جنیدالرحمان، جنرل سیکریٹری محمد بشیر اور دیگر کا کہنا تھا کہ لاک ڈاؤن کو تقریباً ڈھائی ماہ سے زائد کا عرصہ گزر گیا ہے جس کے باعث ہمارا کاروبار مہینوں سے بند پڑا ہے۔ کیٹرنگ کا سارا سامان خراب اور زنگ آلود ہو گیا ہے۔ انہوں نے بتایا کہ کاروبار بند ہونے سے مالکان کو کافی نقصان کا سامنا کرنا پڑا ہے جس کے باعث وہ پریشانی اور ذہنی اذیت میں مبتلا ہو گئے ہیں جبکہ 800 روپے کے دیہاڑی دار ملازمین بھی بیروزگار ہو کر رہ گئے ہیں جن کے گھروں میں اس وقت فاقے پڑے ہوئے ہیں اور دو وقت کی روٹی کو پریشان ہیں۔
انہوں نے مزید کہا کہ حکامِ بالا کو کئی بار کہہ چکے ہیں لیکن ان کے کانوں پر جوں تک نہیں رینگتی۔ انہوں نے وزیرِاعظم پاکستان، چیف جسٹس آف پاکستان، وزیرِاعلیٰ سندھ اور دیگر اعلیٰ حکام سے مطالبہ کیا کہ جس طرح سے دیگر کاروبار کو ایس او پیز پر عمل درآمد کرتے ہوئے اجازت دی گئی ہے اسی طرح ہمیں بھی اپنے کاروبار کو کرنے کی اجازت دی جائے تاکہ پریشانی اور ذہنی اذیت میں مبتلا مالکان اور بیروزگاری سے دوچار ملازمین اپنا روزگار کما کر چین کی زندگی گزار سکیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں