ملیر، مراد میمن گوٹھ میں امن و مان سے متعلق علاقہ مکینوں کا اجلاس

ملير (نامہ نگار، منظورسولنگی) مراد میمن گوٹھ میں امن و امان کی خراب صورتحال کا جائزہ لینے کے لیے تاجربرادری اور میمن کمیونٹی کا مشترکہ اجلاس۔ اجلس میں بڑی تعداد میں تاجر رہنما اور علاقہ معززین نے شرکت کی۔ اس موقع پر رہنماؤں کی جانب سے گذشتہ کچھ روز سے بڑھتی ہوئی ڈکیتی کی وارداتوں پر سخت تشویش کا اظہار کیا گیا۔ پولیس کے علاوہ اپنی مدد آپ کے تحت سیکیورٹی نظام لانے اور ہر گلی، چوراہوں اور بازاروں میں سی سی ٹی وی کیمرے لگانے کا فیصلہ کیا گیا۔
سماجی تنظیم کے تحت ایس ڈی او آفیس میں علاقے کے امن و امان کی خراب صورتحال کو بہتر بنانے کے لئے سابق ڈی آئی جی خمیسو خان میمن کی صدارت میں اجلاس منعقد ہوا۔ اجلاس میں منظور احمد میمن، حاجی حنیف میمن، رمضان میمن، حاجی عبدالواحد میمن، نسیم پرویز میمن، مولا بخش میمن، سلیم جی میمن، ڈاکٹر سلطان احمد میمن، انجنیئر حبیب اللہ میمن، عبدالصمد میمن، ثناءاللہ میمن، سلیمان میمن، عثمان میمن سمیت بڑی تعداد میں تاجر برادری کے رہنماؤں اور علاقہ معززین نے شرکت کی۔
اجلاس میں بتایا گیا کہ ماہِ رمضان کے موقع پر پولیس کی بہتر حکمتِ عملی کے باعث کوئی ناخوشگوار واقعہ رونما پیش نہیں آیا جبکہ گذشتہ کچھ روز سے مراد میمن گوٹھ کی مرکزی بازار میں دن دہاڑے ڈکیتی کی وارداتیں ہو رہی ہیں جو کہ پولیس انتظامیہ کے لیے سوالیہ نشان ہے۔ اجلاس میں بریفنگ دیتے ہوئے حاجی محمد حنیف میمن اور حاجی عبدالواحد میمن نے بتایا کہ حالیہ واقعات کے بعد ہماری پولیس کے اعلیٰ حکام، ڈی آئی جی، ایس ایس پی ملیر اور ڈی ایس پی سے ملاقات ہوئی ہے اور انہیں اپنے علاقے میں امن وامان کی خراب صورتحال سے آگاہی دی ہے۔ انہوں نے علاقے میں پولیس کی نفری بڑھانے کی منظوری دے دی ہے۔
انہوں نے مزید بتایا کہ آج کے اجلاس کے حوالے سے اعلیٰ حکام کو آگاہی دی گئی جس کے بعد انہوں نے یقین دہانی کروائی ہے کہ آپ لوگ جو حکمتِ عملی بنائیں گے، ہم اس میں بھرپور تعاون کریں گے۔ تاجر برادری اور علاقے کے تحفظ کے لیے پولیس میدانِ عمل میں سرگرم رہے گی۔ گزشتہ چند دنوں میں جو وارداتیں ہوئی ہے ان کے ملزمان کو کیفرِ کردار تک پہنچایا جائے گا۔ اجلاس کے دوران علاقے کے امن و امان سے متعلق پولیس کے ساتھ رابطہ رکھنے کے لئے ایک کمیٹی بھی تشکیل دی گئی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں