لاڑکانہ، سنگھار کھوسو میں جعلی آپریشن کے خلاف ریلی کا انعقاد

لاڑکانہ (نامہ نگار، نور احمد عباسی) ضلع جامو رو میں پولیس کی جانب سے کھوسہ برادری کے سنگھار کھوسو نامی گاؤں پر جعلی آپریشن کے خلاف سول سوسائٹی، جیو کومسہ اتحاد، ایل ایس ایف اور وکلاء برادری کی جانب سے احتجاج کیا گیا۔ اس موقع پر واقعہ کے خلاف قائم شاہ بخاری روڈ سے پریس کلب تک ریلی نکالی گئی۔مظاہرین نے ایس ایس پی جامشورو کے خلاف سخت نعریبازی کی۔
مظاہرین کی رہنمانی سلمیٰ بھٹو، محمود انور ابڑو، نایاب سرکش اور دیگر کررہے تھے۔ رہنماؤں کا کہنا تھا کہ ہم پہلے ہی کرونا وائرس اور ایچ آئی وی کے باعث لاشیں اٹھا رہے ہیں۔ قانون نافذ کرنا پولیس کی ذمہ داری ہے لیکن پولیس حملہ آور ہو کر عورتوں اور معصوم بچوں کو نشانہ بنائے یہ بات برداشت کے قابل نہیں ہے۔

وکلاء رہنما سلمیٰ بھٹو نے کہا کہ ایس ایس پی جامشورو نے جس طرح جہالت کی انتہا کی ہے، اس کی شدید مذمت کرتے ہیں۔ ان کا کہنا تھا کہ ہماری نہتی بچیوں اور عورتوں پر اسلحے سے حملہ کرکے ان کو دہشتگرد قرار دیا گیا ہے۔ ان کو انصاف فراہم کرنے کے لیے وزیرِاعلیٰ سندھ، چیف جسٹس آف پاکستان سے اپیل کرتے ہیں کہ واقعہ کی تحقیقات کرکے انصاف فراہم کیا جائے۔
خیال رہے کہ جامشورو میں کچھ روز قبل پولیس کی جانب سے سنگھار کھوسو نامی گاؤں پر جعلی آپریشن کیا گیا تھا جس میں گاؤں میں موجود درجنوں گھر مسمار کیے گئے تھے اور عورتوں سمیت نومولود بچوں کو گرفتار کیا گیا تھا۔ واقعہ کے خلاف سندھ بھر میں شدید غم و غصہ ہے اور عدالتی تحقیقات کا مطالبہ کیا جا رہا ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں