ملیر: پانچ روز گذرنے کے باوجود بھی مغوی نوشین بازیاب نہ ہو پائی، حلیم عادل شیخ کی بچی کے گھر آمد

ملیر (رپورٹ، منظورسولنگی) سپر ہائی وے کے قریب سائٹ پولیس سٹیشن کی حدود سے اغواء ہونے والی غریب گھرانے کی لڑکی 14 سالہ نوشین پانچ روز گذرنے کے باوجود بازیاب نہیں ہو پائی ہے جب کے پڑوسیوں نے نامعلوم اغواء کاروں کی وڈیو بھی ریکارڈ کی ہے جس سے پولیس کو مدد مل سکتی ہے لیکن ملزماں اب تک پولیس کی پکڑ میں نہیں آ پائے ہیں۔
مغوی لڑکی کے گھر میں صفِ ماتم بچھ گئی ہے۔ پی ٹی آئی سندھ کے سینیئر رہنما و پارلیمانی لیڈر حلیم عادل شیخ نے احسن آباد میں واقع بچی کے گھر پہنچ کر ورثا سے تفصیلات معلوم کیے۔ اس موقع پر حلیم عادل شیخ کا میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہنا تھا کہ بچی نوشین کا والد رکشہ چلاتا ہے، والدہ گھروں میں کام کرتی ہے پانچ روز سے ان غریبوں کے گھر میں ماتم ہورہا ہے۔ پولیس نے اب تک کوئی کارروائی نہیں کی ہے۔
علاقہ مکینوں نے کچھ نامعلوم افراد کی وڈیوز بھی دیں ہیں انہوں نے کہا کہ واقعہ کے دو روز بعد پولیس نے ایف آئی درج نہیں کی اور جب ایف آئی آر درج ہو گئی تو ملزمان کے خلاف کوئی کاروائی نہیں ہو پائی۔
انہوں نے مزید کہا کہ میری اس معاملے پر آئی جی سندھ و ایڈیشنل آئی جی سندھ سے بات ہوئی ہے امید ہے کہ آئی جی سندھ و ایڈیشنل آئی جی کی یقین دہانی پر ملزمان جلد گرفتار ہونگے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں