بدین: سماجی تنظیم کے تحت تعلیمی آگاہی کی تقریب

بدین (رپورٹ، دانش ملک) ایم ڈی ایف نامی ایک نجی تنظیم کے زیرِاہتمام جیم خانہ میں تعلیم کی فروغ اور بچوں کو سکول میں داخلہ کے حوالہ سے ایک تقریب کا انعقاد کیا گیا۔ تقریب میں والدین اور اساتدزہ پر مشتمل کمیونیٹی آرگنائزیشن اور محلہ کمیٹی کے مشاورتی اور پیش رفت پروگرام میں محکمہِ تعلیم کے افسران نے بڑی تعداد میں شرکت کی۔

اس موقع پر ضلعی تعلیمی افسر بدین قادر بخش تالپور ، لیٹریسی آفیسر عمران شاہ ، ایم ڈی ایف کے پروجیکٹ کوآرڈینیٹر خالد احمد میمن، بدین پریس کلب کے صدر تنویر احمد آرائیں ، ایون صحافت کے صدر غلام مصطفیٰ جمالی ، ایچ یو جے بدین کے صدر عمران عباس خواجہ ، سماجی رہنماؤں اور اراکینِ سول سوسائیٹی میر لکھی سکندر سومرو، کبیر جمالی، ابایو پہنور، محمد حسن بلوچ ، اللہ ڈنو کھٹی ، میر والید رضا ، غلام شبیر پہنور اور دیگر نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ اس وقت خطہ میں سب سے کم لیٹریسی ریٹ پاکستان میں اور پاکستان میں سب سے کم سندھ اور سندھ میں سب سے کم 34 فیصد لیٹریسی ریٹ بدین کا ہے۔

تقریب سے خطاب کرتے ہوئے مقریرین نے کہا کہ سالانہ بجٹ میں تعلیم کی فروغ اور سہولتوں کی فراہمی کے لئے اربوں روپے مختص کرنے کے باوجود حکومت کی غلط، کمزور اور ناقص پالیسیوں اور کرپشن کے باعث تعلیمی نظام تباہی کا شکار ہے ۔ ریاست اور حکومت آئینِ پاکستان کے آرٹیکل 25 اے کے تحت ہر بچے کو مفت اور لازمی تعلیم دلوانے کی پابند ہے جس کے تحت قانون والدین کو بھی اپنے بچوں کو اسکول داخل کرانے کا پابند کرتا ہے۔

مقررین کا مزید کہنا تھا کہ تعلیم دشمن مافیا نے تعلیم کو ایک منافعہ بخش کاروبار بنا کر ڈگریوں، پوزیشن اور گریڈ کی سرِعام فروخت کے لئے بولیاں لگا کر غریب کے بچوں کے لئے تعلیم کے دروازے بند کرنے کے علاوہ حکومتی عہدوں اور معاشرے میں کسی عالیٰ مقام تک پہنچنے کے لئے پیسوں کی دیواریں کھڑی کر دی ہیں۔ اس مافیا کو حکومتی اور دیگر بااثر اداروں کی سرپرستی حاصل ہے۔ انہوں نے کہا تعلیم نہ صرف بچے کو بلند مقام پر پہنچاتی ہے بلکہ گھر کی خوشحالی اور معاشرے میں عزت وقار کا مقام بھی دیتی ہے ۔ اس سے قبل ایم ڈی ایف کی جانب سے دی گئی بریفینگ میں بتایا گیا کہ بدین ضلع کی پسماندہ اور دیہی یونین کونسلز میں مقامی افراد پر مشتمل محلہ کمیٹیز اور کمیونیٹی آرگنائزیشن تشکیل دے کر ہر گھر کے چار سال سے بڑے بچے کو اسکول میں داخل کرانے کی کوشش کی گئی جس میں ہم کامیاب ہوئے ہیں۔ اس آگاہی مہم میں عوام کا شعور بھی بیدار ہوا جو ہماری کامیابی ہے۔ اس موقع پر محلہ کمیٹیز کے اراکین اور رضاکاروں میں شیلڈز اور سرٹیفکیٹ بھی تقسیم کئے گے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں