ملیر، وزیرِ اعلیٰ سندھ کی ہدایات پر صوبائی وزیر کی جانب سے کھلی کچہری، لوگوں کے مسائل حل نہ ہونے پر برہمی کا اظہار

ملیر (رپورٹ، منظورسولنگی) وزیر اعلیٰ سندھ کی ہدایت پر صوبائی وزیر سید اویس شاہ اور وزیرِ اعلیٰ کے معاون کھٹو مل نے گذشتہ روز ملیر کے مسائل پر مجید کالونی میں کھلی کچہری کی۔ کھلی کچہری میں ملیر کے منتخب نمائندگان ، ایم این اے سردار جام عبدالکریم جوکھیو، ایم این اے آغا رفیع اللہ، ایم پی اے سلیم بلوچ، ایم پی اے شاہینہ شیر علی، چیئرمین ضلع کونسل کراچی سلمان عبدالله مراد، چیئرمین ڈی ایم سی ملیر جان محمد بلوچ، ڈی سی ملیر شہزاد فضل عباسی ایس پی کمپلینن ملیر شکیل احمد اور دیگر اداروں کے افسران سمیت علاقہ مکینوں نے بڑی تعداد میں شرکت کی۔ اس موقع پر علاقہ مکینوں نے صفائی نہ کروانے، منشیات فروشی، اسٹریٹ کرائم، ڈی سی ملیر کے اربوں روپے کی بجٹ کے باوجود ترقیاتی کام نہ کروانے کی شکایات کے انبار لگادیئے۔ کچہری میں بیٹھے افسران اور ڈی ایم سی ملیر کے چیئرمین غیر تسلی بخش جوابات دے پائے اور غلط بیانی کی جس پر صوبائی وزیر کے حکم پر ڈی سی ملیر اور سولڈ ویسٹ کے اسسٹنٹ ڈائریکٹر کو شوکاز نوٹس جاری کرنے کا حکم دیا ۔ میڈیا سے بات کرتے ہوئے صوبائی وزیر سید اویس شاہ کا کہنا تھا کہ ملیر میں یہ دوسری کچہری کی جارہی ہے جس میں پیش کئے گئے مسائل بھی بہت اہم ہیں اور سارے مسائل وزیر ِاعلیٰ سندھ کے سامنے پیش کیے جائیں گے۔ انہوں نے افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ افسران عوامی مسائل کے حل میں عدم دلچسپی رکھے ہوئے ہیں جن سے مسائل میں دن بہ دن اضافہ ہو رہا ہے تاہم انہوں نے لوگوں کو یقین دہانی کرائی کہ ان کے مسائل جلد از جلد حل کیے جائیں گے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں