ملیر، لاک ڈاؤن کی انحرافی پر کارخانوں پر چھاپے

ملیر ( نامہ نگار، منظورسولنگی) حکومتِ سندھ کی جانب سے کرونا وائرس کے پھیلاوَ کو روکنے کیلئے نافذ کیے گئے لاک ڈاوَن اور لوگوں کو گھروں تک محدود کرنے کے احکامات کو یکسر نظر انداز کرنے کے خلاف کام کرنےوالی ضلع ملیر کی چار سے زائد ٹیکسٹائیل فیکٹریوں یونس ٹیکسٹائیل، گل احمد، الکرم ودیگر پر گذشتہ روز پولیس اور رینجرز کی بڑی نفری نے چھاپا مار۔ اس دوران سینکڑوں ملازمین کام میں مصروف تھے جنہیں فوری طور پر فیکٹری سے باہر نکال کر گھروں کو روانہ کردیا گیا جبکہ مذکورہ فیکٹریوں کے متعدد افسران کو گرفتار کرلیا گیا۔
اس موقع پر ڈپٹی کمشنر ملیر، ایس ایس پی ملیر و دیگر اعلیٰ افسران کا کہنا تھا کہ کرونا وائرس کی صورتحال خطرناک ہے جس کے پھیلاوَ کو روکنے کیلئے حکومت نے لاک ڈاوَن اور لوگوں کو جمع ہونے سے روکنے کیلئے اقدامات اٹھائے ہیں۔ جو بھی ادارہ نظر اندا زکرے گا اس کے خلاف کارروائی کی جائیگی جبکہ ملازمین کا کہنا تھا کہ وہ اگر انتظامیہ کے دباؤ کے تحت ڈیوٹی پر نہیں آتے تو انہیں نوکری سے برخاست کردیا جاتا ہے۔ اگر تمام خطرات کے باوجود ڈیوٹی پر آتے ہیں تو قانون نافذ کرنے والے اداروں کی جانب سے گھروں کو واپس کردیا جاتا ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں