ملیر، دادو میں سولنگی برادری پر حملے کے خلاف برادری سراپا احتجاج

ملیر (نامہ نگار، منظورسولنگی) سولنگی ویلفیئر آرگنائزیشن ملیر کے رہنما انجینئر امداد سولنگی، غلام عباس سولنگی، غلام رسول سولنگی اور دیگر ضلع دادو کے تھانہ رکن کی حدود میں پیارو اسٹیشن کے قریب پہنور برادری کےمسلح افراد کی جانب سے ماچھی گوٹھ کے مکین خدا بخش سولنگی کے گھر پر حملہ کر کے چادر اور چاردیواری کا تقدس پامال کرنے، عورتوں اور گھروں میں موجود بچوں پر تشدد کرنے کی شدید مذمت کرتے ہوئے ملزمان کو گرفتار کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔
انہوں نے ملیر کے صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ گوٹھ پر حملہ آور نیاز پہنور اور ان کے ساتھی فرار ہوگئے جس کی این سی تھانہ رکن پر درج کرالی گئی ہے۔ انہوں نے کہا کہ 2005 سے پہنور برادری کے ساتھ سولنگی برادری کا زمینی تنازعہ چل رہا تھا جس کا فیصلہ پہنور برادری کے معزز بابن خان پہنور، پیر غمبل خان، میاں حبیب اللہ ہنگورو اور دیگر معززین نے کیا تھا جس میں پہنور برادری کو قصور وار ٹھہرا کر ایک لاکھ ساٹھ ہزار کا جرمانہ عائد کیا گیا جو رقم نیاز پنہور نے سولنگی برادری کو دی تھی۔
فیصلے کے بعد نیاز پہنور نے لالچ میں آکر کورٹ میں مقدمہ درج کر وایا جو آج تک زیرِ سماعت ہے۔ خدا بخش سولنگی مقدمے کی قانونی طور پر پیروی کر رہا ہے۔ کچھ روز قبل اچانک نیاز پہنور اپنے ساتھ جمال پہنور اور غلام قادر پہنور گوٹھ کے مسلح افراد کے ساتھ خدا بخش گوٹھ پر حملہ کردیا۔ حملے کے خلاف تھانہ رکن میں این سی درج کروائی گئی لیکن وہاں کے اے ایس آئی پریل پہنور نے پہنور برادری کے ساتھ تعاون کر کے اپنے فرائض کا ناجائز استعمال کیا اور مدعی محمد عارب سولنگی اور امام بخش سولنگی کو گرفتار کر کے مقدمہ درج کر لیا جس کی سولنگی ویلفیئر آرگنائزیشن پاکستان ملیر پرزور مذمت کرتی ہے۔
سولنگی ویلفیئر آرگنائزیشن پاکستان ضلع ملیر کے نمائندوں نے وزیرِ اعلیٰ سندھ، آئی جی سندھ، ایس ایس پی دادو سمیت دیگر متعلقہ حکام سے مطالبہ کیا کہ خدا بخش سولنگی کے گھر پر حملے میں ملوث مسلح افراد کے خلاف ایف آئی آر درج کر کے متاثرہ خاندان کے ساتھ انصاف کیا جائے بصورت دیگر سولنگی ویلفیئر آرگنائزیشن پاکستان کی جانب سے پورے سندھ میں احتجاجی تحریک کا آغاز کیا جائے گا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں