ملیر، پپری میں کرونا وائرس پھیلنے کا خدشہ، عوام کو تحفظات

ملیر (نامہ نگار، منظورسولنگی ) پسماندہ اور گنجان آبادی کے علاقے پپری میں بن قاسم پولیس کرونا وائرس کے پھیلاؤ کو روکنے کے لیے اعلانیہ لاک ڈاؤن پر عمل درآمد کرانے میں مکمل طور پر ناکام ہوگئی ہے۔ دکانوں اور گلیوں میں لوگوں کا ہجوم معمول کے مطابق ہی نظر آتا رہا جس سے کرونا وائرس کے بڑھنے کا خدشہ پیدا ہو گیا ہے۔ اس حوالے سے علاقہ مکینوں امام بخش گبول، عبداللطيف بگھیو، محمد یامین، نصیر احمد اور دیگر کا کہنا ہے کہ اعلانیہ لاک ڈاؤن کو آج 19 دن ہوگئے ہیں لیکن عوام گھروں تک محدود کرنے میں بن قاسم پولیس ناکام دکھائی دیتی ہے۔ لوگ با آسانی ایک جگہ سے دوسری جگہ ہجوم کی صورت میں جاتے دکھائی دیتے ہیں لیکن پولیس عدم دلچسپی کا مظاہرہ کرتے ہوئے خاموش تماشائی بنی ہوئی ہے۔
ان کا مزید کہنا تھا کہ پپری مین اسٹاپ پر ہر وقت لوگوں کا رش رہتا ہے لیکن پولیس انہیں منتشر کرنے میں کوئی کردار ادا نہیں کرتی۔ اگر معاملہ اسی طرح چلتا رہا اور وبا پھیلنے لگی تو دیکھتے ہی دیکھتے پورے علاقے کو اپنی لپیٹ میں لے لے گی۔ ان کا کہنا تھا کہ کریانہ اسٹور اور میڈیکل اسٹور کے علاوہ دیگر دکانیں بھی کھلی ہوئی ہیں تو پھر ایسے لاک ڈاؤن کا کیا فائدہ ہے؟ انہوں نے وزیرِ اعلیٰ سندھ، آئی جی سندھ اور دیگر اعلیٰ حکام سے اپیل کی ہے کہ خدارا گنجان آبادی پر مشتمل پپری کے علاقے میں موثر حکمتِ عملی کے تحت اقدامات کر کے کرونا وائرس کے پھیلاؤ کو روکا جائے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں