ملیر، اسٹیل مل انتظامیہ اور سی بی اے کے درمیان ڈیڈ لاک برقرار

ملیر (نامہ نگار، منظورسولنگی) پاکستان اسٹیل ملز انتظامیہ نے مورخہ 13اپریل پیر کے روز صبح سی بی اے انصاف لیبر یونین کو ایک مراسلے کے ذریعے احکامات جاری کیےد ہیں کہ ان کی سی بی اے کی مدت 12 اپریل کو ختم ہوگئی ہے، لہذا وہ دفتر خالی کریں اور سی بی اے کی مراعات واپس کریں۔ سی بی اے یونین نے موصول کردہ لیٹر کو غیر قانونی اور ناجائز قرار دیتے ہوئے لیٹر پر عمل درآمد کے بجائے اسٹیل ملز انتظامیہ کو جوابی خط تحریر کیا جس میں مؤقف اختیار کیا گیا کہ سی بی اے کے انتخابات 12 اپریل 2017 کو ہوئے تھے جس کی مدت 12/04/2019 کو ختم ہونا تھی تاہم سی بی اے کی جانب سے اسلام آباد میں این آئی آر سی دفتر سے ایک سال تک کی توسیع کرالی گئی تھے۔
خط میں مزید لکھا گیا ہے کہ ماضی میں اسٹیل مل انتظامیہ کے ساتھ طے پانے والے تحریری معاہدے میں سی بی اے کے نئے انتخابات اور نئے معاہدے تک موجودہ سی بی اے کو دی گئی مراعات نہ ختم کی جائیں گی نہ ہی واپس لی جائیں گی۔ لہذا ان سے اس معاہدے کی رو سے دفتر خالی نہ کرایا جائے۔ دوسری جانب سی بی اے کے تحریری خط کا جواب دینے کے بجائے محکمہِ صنعتی تعلقات، سیکیورٹی اور ٹرانسپورٹ افسران کی ہدایات پر سیکیورٹی عملے سمیت بن قاسم پولیس کی بھاری نفری نے سی بی اے انصاف لیبر یونین کے دفتر پر خالی کروانے کیلئے دھاوا بول دیا اور زبردستی اہلکار دفتر کے اندر داخل ہوگئے جس کے باعث صورتحال کشیدہ ہوگئی اور بڑی تعداد میں سی بی اے کے عہدیداران و حامی دفتر کے باہر جمع ہوگئے۔ اس سلسلے میں انتظامیہ اور سی بی اے عہدیداران کے مابین مذاکرات کیے گئے جس کے بعد معاملات کو ایک روز تک ملتوی کردیا گیا ۔

اپنا تبصرہ بھیجیں