گھوٹکی، اغواء ہونے والی لڑکی عدالت میں پیش

گھوٹکی (نامہ نگار، جعفر شيخ) خانپور مہر کے نواحی گاؤں علی مہر کی رہائشی لڑکی ستارہ مہر نے فرسٹ سول جج گھوٹکی کی عدالت میں پیش ہو کر اپنا بیان ریکارڈ کروایا۔ متاثرہ لڑکی نے اپنے ہی شوہر اور دیگر ساتھیوں پر اغواء اور زیادتی کا الزام عائد کر دیا ہے۔ میڈیا سے بات کرتے ہوئے ستارہ مہر کا کہنا تھا کے مجھے شکور مہر اور دیگر ملزمان نے اغواء کر کے زبردستی نکاح نامہ پر دستخط کروائے ہیں۔ میرا نکاح نہیں ہوا ہے۔
گھوٹکی کی عدالت میں ستارہ مہر کا بیان ریکارڈ کرنے کے بعد لڑکی کو ورثاء کے حوالے کر دیا گیا ہے۔ گھوٹکی کے فرسٹ سول جج کی عدالت نے نوٹس جاری کرتے ہوئے کیس کے تفتیشی افسر اور الزام میں آنے والے ملزمان کو 25 اپریل کو طلب کر لیا ہے۔ واضح رہے کہ متاثرہ لڑکی ستارہ مہر کے اغواء کا مقدمہ پہلے ہی گھوٹکی کے اے سیکشن تھانے پر درج ہے.

اپنا تبصرہ بھیجیں