ملیر، ریتی و پانی کی چوری کا سلسلہ جاری

ملیر (نامہ نگار، منظورسولنگی) کراچی سمیت دیہی علاقوں میں ایک ماہ سے جاری لاک ڈاؤن میں نرمی ہوتے ہی ضلع ملیر کے مختلف علاقوں تھانہ میمن گوٹھ، شاہ لطیف، سکھن، گڈاپ ود یگر علاقوں میں بڑے پیمانے پر پانی اور ریتی چوری کرنے کیلئے ٹینکر اور ڈمپر روڈ پر دوڑنے لگ گئے ہیں۔ چوری کردہ پانی مختلف بھینسوں کے باڑوں، کارخانوں، فارم ہاؤسز میں فروخت کیا جارہا ہے جبکہ ملیر، سکھن و دیگر سرکاری اراضی سے دفع 144 کے نفاذ کے باوجود بڑے پیمانے پر ریتی چوری کرکے فروخت کرنے کا سلسلہ سرِ عام جاری ہے۔
علاقہ مکینوں نے الزام عائد کیا ہے کہ مذکورہ مافیہ کو مقامی تھانوں کی پولیس کی سرپرستی حاصل ہے جو ان غیر قانونی سرگرمیوں کو روکنے کے بجائے رکشہ اور موٹر سائیکل ڈبل سواری سے رشوت اور چالان کرنے میں مصروفِ عمل ہے۔سول سوسائٹی رہنماؤں ایڈووکیٹ موسیٰ کولاچی، فیض سندھی، سنتوش، سندر داس و دیگر علاقہ مکینوں نے حکومتی رٹ کو چیلنج کرنے والے افراد اور پانی، ریتی چور مافیہ کے خلاف کارروائی کا مطالبہ کیا ہے ۔

اپنا تبصرہ بھیجیں