گھوٹکی، ستارہ مہر کو اپنے خاوند کے ساتھ رہنے کی اجازت

گھوٹکی (نامہ نگار، جعفر شیخ) دو ماہ قبل پسند کی شادی کرنے والی ستارہ مہر اور عبدالشکور مہر معاملہ نیا رخ اختیار کر گیا۔ سیشن کورٹ گھوٹکی کی عدالت میں ستارہ مہر اور عبدالشکور مہر کیس کی سماعت ہوئی۔ سماعت کے موقع پر ستارہ مہر اپنے والدین اور وکیل کے ہمراہ سخت پولیس پہرے میں عدالت پہنچی۔ ستارہ مہر نے اپنے خاوند عبدالشکور مہر کے حق میں بیان رکارڈ کرا دیا۔
ستارہ مہر کے بیان کے بعد پولیس نے والدین کو بیان رکارڈ کروانے والے کمرے سے باہر نکال دیا۔ عدالت نے ایسے بیان پر ستارہ مہر کو خاوند کے ساتھ رہنے کی اجازت دے دی۔ اس موقع پر عدالت کے باہر ستارہ مہر نے اپنے خاوند کے ہمراہ میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ اپنی مرضی اور رضا خوشی سے راولپنڈی کی عدالت میں پسند کی شادی کی ہے جب کہ کچھ روز قبل میرے رشتے داروں نے مجھے ہراساں کر کے اغواء کا جھوٹا بیان دلوایا اور میرے خاوند اور دیگر رشتے داروں پر اغوا کا جھوٹا مقدمہ بھی درج کرایا ہے۔
ستارہ مہر نے مزید بتایا کہ میں اپنے خاوند کے ساتھ خوش ہوں اور اس کے ساتھ رہنا چاہتی ہوں۔ عبدالشکور مہر نے بتایا کہ ستارہ کے رشتہ دار جان کے دشمن بن گئے ہیں جن سے ہم دونوں کو جان کا خطرہ ہے۔ ہمیں تحفظ دیا جائے۔ ستارہ مہر کے بیان بدلنے کے بعد عدالت کے باہر پولیس کی بھاری نفری تعینات کردی گئی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں