سماجی کارکن احسن شر کے خاندان کو ہراساں کرنے کی اطلاعات

کراچی (بیورو رپورٹ) خیرپور کی تحصیل ٹھری میرواہ میں سماجی کارکن احسن شر کے خاندان کو ہراساں کرنے کی اطلاعات ملی ہیں۔ تفصیلات کے مطابق احسن شر کے والدین اور ان کے خاندان کو سیاسی مخالفین کی جانب سے دھمکیاں دی گئی ہیں اور ان کے خاندان کو ہراساں کرنے کا سلسلہ تاحال جاری ہے۔ گذشتہ کچھ روز کے دوران کرونا وائرس سے نمٹنے کے لئے احسن شر اپنے حلقہِ انتخاب تحصیل ٹھری میرواہ میں انسدادِ کرونا وائرس اقدامات میں مصروف تھے کہ ان کے سیاسی مخالفین کی جانب سے ان کو نشانہ بنایا گیا ہے۔
یونائیٹڈ ٹی وی کی جانب سے رابطہ کرنے پر احسن شر نے بتایا کہ جمہوری معاشروں میں اظہارِ رائے کی آزادی کا حق ہر شہری کو ہوتا ہے۔ میری سیاسی سوچ اور میرے خیالات سے اختلاف کیا جا سکتا ہے لیکن ان کی پاداش میں مجھے ڈرانے اور دھمکانے کی کوشش کی جا رہی ہے اور والدین کو بذریعہ فون نتائج بھگتنے کی دھمکیاں دی جا رہی ہیں جس کے بعد میرے خاندان کو سیاسی مخالفین کی جانب سے خطرات لاحق ہیں۔

خیال رہے کہ احسن شر نوجوان سماجی کارکن ہیں اور ٹھری میرواہ سے انتخابات میں حصہ لیتے ہیں جہاں وبا کے اس مشکل وقت میں اپنے ووٹروں کے ساتھ کھڑے ہونے پر سیاسی مخالفین کی جانب سے ان کو نشانہ بنایا جا رہا ہے۔ انہوں نے اعلیٰ حکام سے فوری نوٹس لینے کا مطالبہ کیا ہے۔
دوسری جانب کراچی یوتھ فورم کے رہنما اور سماجی کارکن میاں الیاس محمد عباسی نے واقعہ کی مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ احسن شر سیاسی نظریات سے بالاتر ہو کر انسانی ہمدردی کی بنیاد پر لوگوں کی خدمت کرتا ہے جس کو اکیلا سمجھنے والے احمقوں کی جنت میں رہ رہے ہیں۔ انہوں نے ایس ایس پی خیرپور سے مطالبہ کیا کہ احسن شر اور ان کے خاندان کو تحفظ فراہم کرکے ملوث افراد کے خلاف کارروائی کی جائے۔ بصورت دیگر سندھ بھر میں احتجاج کا سلسلہ شروع کیا جائے گا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں