ملیر، اسٹیل ملز کے سیکیورٹی اہلکار فارغ کردیئے گئے

ملیر (نامہ نگار، منظورسولنگی) اسٹیل مل کے ذیلی ادارے گلشن حدید ویلفیئر ٹرسٹ میں گذشتہ 10 سال سے کام کرنے والے 15 سیکورٹی اہلکاروں کو نوکریوں سے فارغ کردیا گیا ہے۔ اس سلسلے میں فارغ کئے گئے اہلکاروں منظور احمد پہنور،گل حسن بروہی، الہداد جوکھیو، یار محمد و یگر نے صحافیوں کو بتایا کہ بلا جواز ہمیں ملازمت سے فارغ کر کے تین ماہ کی تنخواہیں بھی ادا نہیں کی گئیں۔ ہمارا قصور یہ تھا کہ ہمارے گھروں میں فاکے پڑ گئے تھے جس کے باعث ہم نے افسران سے تین ماہ کی تنخواہوں کی ادئیگی کا مطالبہ کیا۔ وہ ناراض ہوگئے اور ہماری عمر کا بہانہ بنا کر نوکریوں سے فارغ کردیا گیا ہے۔
انہوں نے مزید کہا کہ گلشِن حدید ٹرسٹ ایک نجی سماجی ادارہ ہے جس میں ہم صحت مند ملازمین سیکیورٹی کی نوکری کر رہے ہیں۔ خود انتظامیہ نے طبی معائنے میں ہمیں صحت مند قرار دیا۔ انہوں نے کہا کہ گذشتہ رات ہم ڈیوٹی کر کے جیسے ہی گھر پہنچے تو سپروائیزر شبیر بروہی نے آکر حکم کیا کہ کل سے ہماری نوکری ختم کردی گئی ہے۔ اب وہ ہمیں اسٹیل ٹاؤن میں گھر خالی کرنے کا حکم دے رہے ہیں۔
ان کا کہنا تھا کہ وزیرِاعظم کے حکم کے باوجود کرونا وائرس، لاک ڈاؤن اور عید کے موقع پر ہم غریبوں کو ملازمت سے فارغ کرنا ظلم ہے۔ اس سلسلے میں جب سیکیورٹی سپروائیزر سے رابطہ کیا گیا تو ان کا کہنا تھا کہ حکومتی ایس او پی کے تحت جو سیکیورٹی اہلکار 50سے 80 سال کی عمر کے ہو گئے ہیں، ان کو فارغ کیا جا رہا ہے۔ جلد ان کی بقایا جات ادا کردی جائیں گی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں