ملیر، عدالت کے حکم پر گندے پانی کی فصلوں کے خلاف آپریشن

ملیر (نامہ نگار منظورسولنگی ) سندھ ہائی کورٹ کے حکم کے بعد مختلف جگہوں پر گٹر کے پانی پر کاشت کی گئی سبزیاں اور دیگر فصلوں کوختم کرنے کا سلسلہ شروع کردیا گیا ہے۔ اس سلسلے میں اسسٹنٹ کمشنر مراد میمن، مشتاق احمد جتوئی، مختارکار برکت کلہوڑو کی قیادت میں روینیو اور انسدادِ تجاوزات عملے نے ملیر ندی اولڈ تھانے میں کارروائیاں عمل میں لاکر 20 ایکڑ سے زائد کی اراضی پر کاشت کی گئی سبزیاں اور دیگر فصل کو ختم کردیا۔
اس موقع پر مختارکار برکت کلہوڑو نے صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کے سندھ ہائی کورٹ کے حکم کے تحت کارروائیاں کی جارہی ہیں۔ آج اولڈ تھانہ ملیر ندی میں کاشت کئے گئے فصل کو ٹریکٹر کے ذریعے ختم کر دیا گیا ہے۔ ہمارے پہنچنے پر فصل کی دیکھ بھال کرنے والے افراد فرار ہو گئے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ گندے پانی پر کاشت کی گئی سبزیاں انسانی صحت کے لیے انتہائی نقصان دہ ہیں جو انسانی قوتِ مدافعت کو کم کردیتی ہیں۔
انہوں نے مزید کہا کہ گذشتہ دنوں سومار کنڈانی ملیر ندی میں کارروائی کر کے کاشت کی گئی سبزیوں کی فصل کو ختم کر دیا تھا۔ گندے پانی پر کاشت کی گئی تمام سبزیاں اور دیگر فصلیں ختم کرنے کے لیے مزید کارروائیاں عمل میں لائی جائیں گی۔ انہوں نے عوام سے اپیل کی کہ اس سلسلے میں انتظامیہ کے ساتھ تعاون کر کے انہیں معلومات فراہم کریں تاکہ انسانی صحت کے لیے نقصان دہ سبزیاں ختم کر دی جائیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں